ایک یاداشت

تاریخ میں لکھا ہوا ہے کے امیر تیمور کو دھوکا اُس کے سگے بہنوئی امیر حسین بلخی نے دیا جو کے ایک افغان تھا۔

جب تحریکِ ہجرت (1920ء) میں علماء کے فتوے جس میں برِصغیر کو دار الحرب قرار دیئے جانے پر مسلمانوں کو افغانستان ہجرت کرنے کو کہا گیا، تو افغانستان کے شاہ امان اللہ نے مہاجرین کو سرحد سے واپس برِصغیر میں دھکیل دیا، اور مسلمانوں کو پناہ دینے سے انکار کر دیا تھا۔

اب سوال یہ ہے کہ، اگر کسی وجہ سے دوبارہ مسلمانوں کو افغانستان ہجرت کرنا پڑے، تو کیا افغانستان اُن کو پناہ دے گا؟ سوچیئے۔۔۔

چنانچہ ہمیں اپنی تاریخ کو یاد رکھتے ہوئے اپنے مستقبل کے فیصلے کرنا چاہئیں۔